24879903_1329620350476565_7166122139999811741_o

اندرون لاہور شہر میں بچوں کے ادبی میلے کے انعقاد کی تمام تیاریاں مکمل

ٓبچوں کا ادبی میلہ ،جو آرٹ اور ادب پر مبنی ایک سماجی تحریک ہے اور والڈ سٹی لاہور اتھارٹی نے آج شاہی حمام میں منعقد ہونے والی مشترکہ پریس کانفرنس میں بچوں کے ادبی میلے کی تاریخوں کا اعلان اور ایونٹ کی تفصیلات پر روشنی ڈالی۔ چلڈرن لٹریچر فیسٹیول اندرون لاہور
کے مختلف تاریخی اہمیت کےحامل مقامات میں 12جنوری سے 14جنوری تک منعقد کیا جا رہا ہے۔

سی ایل ایف کی بانی بیلا رضا جمیل نے تفصیلات بیان کرتے ہوئے کہا ’’کہ لاہور ایک ورثہ اور ثقافت پر کھڑا شہر ہے۔ ہم اس تاریخی داستان کوکے موضوعات کا حصہ بنانا چاہتے ہیں ۔ اس طرح ہم کے ساتھ باہمی تعاون سے متعلق کو ششوں پربہت فخر کرتے ہیں اور یقین رکھتے ہیں کہ اس سال کی تقریبات میں کہانیاں ، کہانی سنانا،تخلیقی اور پڑھنے کے لئے، بچوں کی محبت کو فروغ دینے اور ان کی تربیت کرنے میں مدد ملے گی۔

اس سال کا ادبی میلہ، امن ، ورثہ اور پاکستان کے 70سال کے جشن کے موضوع کے ارد گرد تشکیل دیا گیا ہے اور اس میں پاکستان کے ثقافتی خزانے کو اُجا گر کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔سی ایل ایف کے سیشنز اندرون شہر میں دہلی گیٹ سے آصف جاہ حویلی تک 14ثقافتی مقامات بشمول شاہی گزر گاہ کے ساتھ ساتھ تمام مقامات میں ایک ساتھ منعقد کیے جائیں گے ۔

اس میلے میں مختلف سرگرمیاں منعقد کی جا رہی ہیں ، جن میں ڈیجیٹل ورکشاپس ، آرٹس اور دستکاری ، موسیقی کے ذریعے کہانی سنانا، پتلی تماشہ اور انٹر ایکٹوتھیٹر ورکشاپس کے ساتھ روایتی آرٹ کی قسمیں خصوصی طور پر ٹائل بنانا، مٹی کا کام اور فرسکو پینٹنگ شامل ہیں ۔

ملک بھر سے مشہور مصنفین، شاعر، فنکار ، تعلیمی ماہرین اور گلوکار اور موسیقار لاہور کے بچوں کے لیے ایونٹ کے حصے کے طور پر اپنا وقت اور علم دینے کے لئے تشریف لا رہے ہیں ۔ شرکا ء میں شامل اپنے شعبہ کے ماہرین جیسے زبیدہ مصطفی، رومانہ حسین، امینہ سید، عدیل ہاشمی، عارفہ سیدہ، فیصل باری ، مشرف علی فاروقی اور بصارت کاظمی ۔

یہ میلہ مختلف اداروں جیسے یونیسکو، آکسفورڈ یونیورسٹی پریس، برٹیش کونسل، الائیڈ بنک، بابر علی فاؤنڈیشن، بیکن ہاؤس سکول سسٹم، لاہور گرائمر اسکول کے تعاون سے منعقد کیا جا رہا ہے جس سے امن اور ورثہ کے پیغام کو فروغ دینے میں مدد ملے گی ۔ لاہور کی ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی نے بھی اس تقریب کے لیے اسکول جانے والے بچوں کی زیادہ سے زیادہ تعداد کی شمولیت کی مکمل حمایت کی ہے۔

اس میلے کی تقریب پر تبصرہ کرتے ہوئے جناب کامران لاشاری نے کہا”تمام لاہور کے لیے اس حیرت انگیز ایونٹ کو یاد گار بنانے کے لئے سی ایل ایف کی ٹیم کے اشتراک میں کام کرنے سے بہت خوش ہوئی ہے ۔ ہمیں یقین ہے کہ یہ تقریب سب کے لئے بہت تفریح اور تعلیم کا ذریعہ فراہم کرے گی اور امید ہے کہ اس تعاون کو مستقبل میں بھی اچھی طرح سے جاری رکھیں گے‘‘

بچوں کا ادبی میلہ ایک سماجی مساوات قائم کرنے والی تقریب ہے اس میں کوئی بھی شریک ہو سکتا ہے یہ سب کے لئے کھلا ہے نہ کوئی فیس ہے اور نہ کوئی ٹکٹ۔ والڈ سٹی لاہور اتھارٹی کے تعاون سے منعقد کیا جا رہا ہے۔ اس میلے کا ارادہ شہر بھر کے بچوں کو ایک چھتری کے نیچے ایک دوسرے
کے ساتھ لانے کے لئے ، انہیں پڑھنے کی محبت ، ادب اور پاکستان ثقافت کو فروغ دینا ہے۔

میلے میں عالمی سطح پر ثقافتی تحفظ اور نوجوانوں کے درمیان بات چیت بھی شامل ہے۔ تین دن تک اندرون شہر لاہور ، ثقافت ، تاریخ ، آرٹ اور پر فارمنس
کے لیے محبت رکھنے والوں کے لیے پسند کی منزل ہوگی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *