1055008-poi-1515696319-835-640x480

وفاقی حکومت نے پراپرٹی ویلیو ایشن ریٹس 57 فیصد کم کر دیے

 اسلام آباد:  عام انتخابات سے صرف چند مہینوں قبل وفاقی حکومت نے ملک کے 6 بڑے شہروں کیلیے پراپرٹی ویلیوایشن ریٹس 57 فیصد تک کم کردیے اور اس طرح کالادھن کا سبب بننے والے خلا پر کرنے کیلیے جاری پالیسی جزوی طور پر تبدیل کردی گئی ہے۔

یہ فیصلہ اس حقیقت کے باوجود لیاگیا کہ 3سالہ پروگرام کے تحت 2 درجن بڑے شہروں کیلیے پراپرٹی ویلیوایشن ریٹس میں اضافے کا دوسرا مرحلہ 7 ماہ سے تاخیر کا شکار ہے، سابق وزیرخزانہ اسحق ڈار نے اگست 2016 میں ریئلٹی سیکٹر کے اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے 3 سالہ پروگرام شروع کیاتھا، دوسرے مرحلے کے تحت یکم جولائی 2017 سے پراپرٹی ویلیوایشن ریٹس میں اوسطاً 25 سے 30 فیصد اضافے کو نافذ کرنا تھا مگر ریٹس میںاضافہ کرنے کے بجائے کراچی، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور اور فیصل آباد کے بعض علاقوں کیلیے وفاقی ودہولڈنگ اور کیپٹل گینز ٹیکسز جمع کرنے کے مقصد سے پراپرٹی ویلیوایشنز کم کر دی گئی ہیں۔

اس سے ریئلٹی سیکٹر کو فروغ مل سکتا ہے جو انتخابات سے قبل حکومت دینا چاہتی ہے، بعض کیسز میں اگست 2016 کو نوٹیفائی ریٹس معمولی زیادہ تھے مگر ایف بی آر کا پلان دوسرے مرحلے کے اطلاق کے وقت سے تصحیح کرنا تھا، اگست 2016 میں ایف بی آر نے 21 بڑے شہروں کیلیے نئے پراپرٹی ویلیوایشن ریٹس نوٹیفائی کیے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *